36.1 C
Delhi
May 20, 2024
Hamari Duniya
Breaking News قومی خبریں

ملک بھر میں پی ایف آئی کے خلاف این آئی اے کی کارروائی، قومی صدر سمیت106افراد گرفتار

NIA RAIDS-PFI

نئی دہلی:
نیشنل انویسٹی گیشن ایجنسی ( این آئی اے) نے پاپولر فرنٹ آف انڈیا ( پی ایف آئی) اور ملک بھر میں اس سے جڑے لنک پر چھاپے ماری کررہی ہے۔ ای ڈی این آئی اے اور ریاستی پولس نے 11ریاستوں میں پی ایف آئی اور اس سے جڑے 106لوگوں کو الگ الگ معاملوں میں گرفتار کیا ہے۔ این آئی اے نے پی ایف آئی کے قومی صدر او ایم ایس سلام اور دہلی کے صدر پرویز احمد کو گرفتار کرلیا ہے۔ ان میں سے کچھ لوگوں کو این آئی اے کے دہلی ہیڈ کوارٹر لایا جاسکتا ہے۔ ایسے میں این آئی اے کے دفتر کی سیکورٹی بڑھا دی گئی ہے۔
این آئی اے نے یوپی ، کیرالہ ، آندھرا پردیش ، تلنگانہ ، کرناٹک ، تمل ناڈو سمیت کئی ریاستوں میں پی ایف آئی اور اس سے منسلک مقامات پر چھاپے مارے ہیں۔ این آئی اے کو بڑی تعداد میں پی ایف آئی اور اس سے وابستہ لوگوں کی مشتبہ سرگرمیوں کے بارے میں معلومات ملی ، جس کی بنیاد پر جانچ ایجنسی آج بڑے پیمانے پر کریک ڈاو¿ن کر رہی ہے۔ 10 سے زیادہ ریاستوں میں ای ڈی ، این آئی اے اور ریاستی پولیس نے 100 سے زیادہ لوگوں کو گرفتار کیا ہے۔ تربیتی سرگرمیوں ، دہشت گردی کی فنڈنگ اور لوگوں کو پی ایف آئی کی تنظیم اور اس کے لوگوں سے جوڑنے کے حوالے سے یہ اب تک کی سب سے بڑی کارروائی ہے۔
پی ایف آئی سے وابستہ لوگوں کو دہلی کے شاہین باغ اور غازی پور سے گرفتار کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ لکھنو¿ کے اندرا نگر سے بھی دو لوگوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔ آسام پولیس نے ریاست سے پی ایف آئی سے وابستہ 9 افراد کو بھی حراست میں لیا ہے۔ ایک پولیس افسر نے خبر رساں ایجنسی کو بتایا ہے کہ پولس اور این آئی اے نے مشترکہ طور پر ہاٹیگاو¿ں، گوہاٹی میں آپریشن شروع کیا اور ریاست بھر میں پی ایف آئی سے تعلق رکھنے والے نو افراد کو حراست میں لیا۔ تمل ناڈو کے مدورائی ، تھینی سمیت کئی اضلاع میں بھی چھاپے مارے گئے ہیں۔ اس کے ساتھ ہی تحقیقاتی ایجنسیوں نے کیرالہ اور کرناٹک کے کئی اضلاع میں کارروائی کی ہے۔ مرکزی وزارت داخلہ ای ڈی ، این آئی اے اور ریاستی پولیس کے مشترکہ آپریشن کی مسلسل نگرانی کر رہی ہے جو رات دیر گئے شروع ہوا تھا۔ تاہم، پی ایف آئی سے وابستہ لوگوں پر کارروائی کے بعد، بنگلورو اور منگلورو میں ایس ڈی پی آئی اور پی ایف آئی کے کارکنوں کی طرف سے احتجاج کیا گیا ہے۔
این آئی اے کے چھاپے پر پی ایف آئی کے جنرل سکریٹری عبدالستار نے کہا کہ فسطائی حکومت احتجاج کی آوازوں کو دبانے کے لیے ایجنسیوں کا استعمال کر رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کی طرف سے کئے جانے والے مظالم کی تازہ ترین مثال آدھی رات کو دیکھنے کو ملی ، جب مرکزی ایجنسیوں این آئی اے اور ای ڈی نے مقبول لیڈروں کے گھروں پر چھاپے مارے۔ قومی ، ریاستی اور مقامی سطح کے لیڈروں کے گھروں پر چھاپے مارے جا رہے ہیں۔ ریاستی کمیٹی کے دفتر پر بھی چھاپے مارے جا رہے ہیں۔ احتجاج کی آوازوں کو خاموش کرنے کے لیے ایجنسیوں کو استعمال کرنے کے فاشسٹ حکومت کے اقدام کی سختی سے مخالفت کریں۔
اس سے قبل 18 ستمبر کو این آئی اے نے آندھرا پردیش اور تلنگانہ میں 23 مقامات پر چھاپے مارے تھے۔ یہ چھاپے پاپولر فرنٹ آف انڈیا ( پی ایف آئی) کے کراٹے ٹریننگ سینٹر کے نام سے تربیتی کیمپ چلانے کے معاملے میں بھی مارے گئے تھے۔ این آئی اے نے نظام آباد ، کرنول ، گنٹور اور نیلور اضلاع میں چھاپے مارے تھے۔ ذرائع کی مانیں تو این آئی اے نے انہی مقامات پر چھاپے مارے جہاں سے دہشت گردانہ سرگرمیوں کی کارروائی کی اطلاع ملی تھی۔
این آئی اے نے کراٹے ٹیچر عبدالقادر پر شکنجہ کسا ہے۔ ذرائع کے مطابق عبدالقادر اور پی ایف آئی پر الزام ہے کہ انہوں نے کراٹے سکھانے کی آڑ میں مسلم نوجوانوں کو فسادات کی منصوبہ بندی کے لیے تیار کیا تھا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ گرفتار افراد سے اسلحہ بھی برآمد ہوا ہے۔ یہ ہتھیار تربیت میں استعمال ہو رہے تھے۔ افسران گرفتار افراد سے کراٹے کی تربیت اور غیر قانونی سرگرمیوں کے حوالے سے پوچھ گچھ کر رہے تھے۔

Related posts

ہماچل میں سیاحوں کا آئے گا سیلاب، ’سکھوحکومت‘ نے مذہبی سیاحت کے فروغ کیلئے بنایا ماسٹر پلان

Hamari Duniya

ملکاپور، محمد احسان سر زیڈ اے اردو ہائی اسکول و جونیئر کالج 31 مارچ کو ہوں گے ریٹائیرڈ

Hamari Duniya

جامع مسجد وارڈ میں ’آپ‘ اور کانگریس میں زبردست مقابلہ

Hamari Duniya