36.1 C
Delhi
May 21, 2024
Hamari Duniya
Breaking News دہلی

عبارت کی جانب سے کمیل رضوی کے اعزاز میں شعری نشست کا انعقاد

ترے خیال کے ساحل سے ہم اٹھے ہی نہیں
یہاں پہ شام ہوئی ہی نہیں کہ گھر جاتے

عبارت کی جانب سے کمیل رضوی کے اعزاز میں شعری نشست کا انعقاد

نئی دہلی،21جنوری(ایچ ڈی نیوز)۔

نئی نسل کے نمائندہ شاعر اور منفرد لب و لہجہ کے شاعر کمیل رضوی کے اعزاز میں عبارت پبلی کیشن کی جانب سے ایک پروقار شعری نشست کا اہتمام کیا گیا۔ جس کی صدارت استاد الشعرا اور ممتاز صحافی سلیم شیرازی نے فرمائی۔ مشہور و معروف ادیب و ناقد حقانی القاسمی مہمان خصوصی کے طورپر جلوہ افروز تھے، جبکہ سینئر صحافی آسیہ خان اور ممتاز عالم رضوی مہمانان ذی وقار کے طور پر موجود تھے۔ اس موقع پر معین شاداب نے کمیل رضوی کے فن اور شخصیت پر روشنی ڈالتے ہوئے ان کے ہنر کا اعتراف کیا، انھوں نے کہا کہ کمیل رضوی کی آواز دور سے پہچانی جاتی ہے۔ شاہین باغ میں منعقد ہونے والی اس شعری نشست میں کئی اہم شخصیات موجود تھیں۔ جن میں ضیابک ڈپو کے سربراہ ضیاء الرحمن، ڈریمس انڈیا ریسرچ فائونڈیشن کے ڈائریکٹر انبساط رانا، عبد الباری قاسمی، شکیل احمد، علیم الرحمن، فوزان خان، ارسلان خان وغیرہ بطور خاص موجود تھے۔ پروگرام کے آخر میں سلام خان مہمانان کرام کا شکریہ ادا کیا۔

جن شعرانے اس پروگرام میں شرکت کی ان میں شاہد انجم، ارشد ندیم، معین شاداب، رحمٰن مصور، وسیم راشد، جاوید صدیقی، فرمان چودھری، انس فیضی اور مونس رحمٰن کے نام قابل ذکر ہیں۔ پیش ہے شعرا کا منتخب کلام:

پھر یوں ہوا کہ روشنی مسلوب ہوگئی

کچھ دور تک تو ساتھ یقین و گماں چلے

سلیم شیرازی

ترے خیال کے ساحل سے ہم اٹھے ہی نہیں

یہاں پہ شام ہوئی ہی نہیں کہ گھر جاتے

کمیل رضوی

ہم پرکبھی وہ وقت نہ آئے دعا کرو

آنکھوں سے جب تمہاری طلب بولنے لگے

شاہد انجم

ایک بھیڑ تھی میں جس کا طرف دار رہا تھا

اب اپنی حمایت میں اکیلا ہی کھڑا ہوں

ارشد ندیم

وہ آسمانوں سے اتریں تو ہم بتائیں انھیں

بلندیوں کا ہنر ہم کو خاک سے آیا

معین شاداب

ترکِ الفت کی کوئی بات کہاں کی اس نے

اوڑھ رکھی ہے کئی دن سے خموشی اس نے

رحمن مصور

دلوں کا دل سے اگر واسطہ نہیں ہوتا

قسم خدا کی کوئی حادثہ نہیں ہوتا

پیوش اوستھی

ہوگیا راستہ میرا روشن

اس کی آنکھوں کا تھا دیا روشن

جاوید صدیقی

اسی لیے چلے آتے ہیں اس کے کوچے میں

وہ چاہتا ہے ہمیں یہ گمان باقی ہے

وسیم راشد

ایک مدت ہوئی ملے بھی نہیں

دو قدم ہم ساتھ چلے ہی نہیں

ممتاز عالم رضوی

جو ان کی عنایات وہ ان کو مبارک

جو اپنی شکایات ہیں وہ کرتے رہیں گے

فرمان چودھری

بے وفائی کا مجھے یا تو دیا جائے ثبوت

ورنہ تسلیم کیا جائے وفادار مجھے

مونس رحمن

Related posts

آسٹریلین اوپن کے فائنل پہنچی ثانیہ بوپنا کی جوڑی، دیکھیں ویڈیو

Hamari Duniya

دہلی یونیورسٹی کے وائس چانسلر پر نفرت کا نشہ سوار،علامہ اقبال کو نصاب سے ہٹایا

Hamari Duniya

عالمی سطح پر سب سے مضبوط انشورنس برانڈ کے طور پر ابھرا ہے ایل آئی سی

Hamari Duniya