31.7 C
Delhi
May 24, 2024
Hamari Duniya
Breaking News دہلی

جمعیۃ علمائ ہند مولانا محمود مدنی کی کوششوں سے جہانگیر پوری  فرقہ وارانہ تصادم کے ملزم نور عالم کو ضمانت

Jamiat Ulame Hind

نئی دہلی (ایچ ڈی نیوز)۔
جمعیة علماءہند کی قانونی چارہ جوئی کی مدد سے جہاں گیر پوری دہلی فرقہ وارانہ تصادم کے ملزم نور عالم کو روہنی کورٹ نے ضمانت دیدی۔اس سے قبل گزشتہ ماہ شیخ انعام الحق کو بھی جمعیة کی کاوش سے ضمانت ملی ہے۔واضح ہو کہ رمضان المبارک میں عین افطار کے وقت شرپسندوں نے جہانگیر پوری جامع مسجد پر حملہ کردیا تھا ، جس کے بعد تشدد کے واقعات رونما ہوئے تھے۔اس سلسلے میں دہلی پولس نے بڑی تعداد میں غریب خاندان سے تعلق رکھنے والے مسلم نوجوانوں کو جیل میں ڈال دیا تھا، جن میں سے ضرورت مند خاندانوں کی طرف سے جمعیة علماءہند عدالتی چارہ جوئی کررہی ہے۔اس کے علاوہ جہاںگیر پوری میں اچانک بلڈوزر چلانے کی کوشش کو بھی جمعیةعلماءہند نے سپریم کورٹ کے ذریعہ ناکام کردیا تھا۔
نورعالم کے سلسلے میں معزز حج ستیش کمار نے جمعیة کے وکیل ایڈوکیٹ محمد عبدالغفار، ایڈوکیٹ محمد نوراللہ اور محمد سرتاج کے اس استدلال کو سنجیدگی سے سنا کہ ملزم کا مبینہ جرم سے کوئی تعلق نہیں ہے اور مقامی پولیس نے صرف اپنے کیس کو سلجھانے کے لیے ملزم کو ایف آئی آر میںپھنسایا ہے اور ملزم 17.04.2022 سے عدالتی تحویل میں ہے۔ اب جب کہ ملزم کے بارے میں تحقیق مکمل ہوگئی ہے، اسے ضمانت دیدی جائے۔اس کے برعکس ریاست کی طرف سے مقرر کردہ وکیل نے ملزم کی ضمانت کی شدید مخالفت کی۔
فریقین کی بحث سننے کے بعد عدالت نے کہا کہ ملزم سے تفتیش پہلے ہی مکمل ہو چکی ہے اور چارج شیٹ بھی داخل کر دی گئی ہے، اب ٹرائل مکمل ہونے میں کافی وقت لگے گا۔ اس درمیان ملزم کو عدالتی تحویل میں رکھنے سے کوئی مقصد پورا نہیں ہو گا۔ کچھ شریک ملزمان کو دہلی کی معزز ہائی کورٹ نے ضمانت دی ہے اور کچھ کواس عدالت سے ضمانت مل چکی ہے۔لہذاان حقائق اور حالات میں،درخواست گزار/ملزم نور عالم کو 25,000- روپے زر ضمانت پر ضمانت دی جاتی ہے۔
نورعالم کی ضمانت پر نورعالم اور اس کے اہل خانہ نے جمعیة علماءہند کے صدر دفتر آئی ٹی او نئی دہلی پہنچ کر مولانا حکیم الدین قاسمی جنرل سکریٹری جمعیة علماءہند سے ملاقات کی اور ان کا شکریہ ادا کیا۔ اس موقع پر مولانا غیور احمد قاسمی بھی موجود تھے۔واضح ہو کہ مولانا حکیم الدین قاسمی کی قیادت میں ایک وفد نے فساد کے بعد متاثرہ علاقہ کا دورہ کیا تھا اور لوگوں کو ہر ممکن مدد د کی یقین دہانی کرائی تھی۔مقدمات اور اس سے متعلق معاملات کے ذمہ دار مولانا نیاز احمد فاروقی ایڈوکیٹ نے بتایا کہ جمعیة علماءہند اپنے صدر مولانا محمود اسعدمدنی کی قیادت میں اول دن سے دہلی فساد 2020 اور جہانگیرپوری تشدد 2022کے مقدمات کی پیروی کررہی ہے، دہلی فساد میں بہت سارے لوگوں کو عدالت نے بری بھی کردیا ہے۔ خدا کی ذات سے امیدہے کہ بے قصور افراد جلد رہا ہوں گے۔

Related posts

ایک ہی خاندان کے چار افراد کے قاتل کو سزائے موت

ڈسٹرکٹ جج انیل کمار نے مقتول کے شاگرد ہمانشو سینی کو مجرم قرار دیا:

Hamari Duniya

شکست کے بعد بابر اعظم کی جذباتی تقریر، کھلاڑیوں کا بڑھایا حوصلہ

Hamari Duniya

غالب انسی ٹیوٹ کے زیر اہتمام چار روزہ اردو ڈرامہ فیسٹول کا انعقاد

Hamari Duniya