44.1 C
Delhi
June 18, 2024
Hamari Duniya
Breaking News قومی خبریں

چندی گڑھ میں جی 20 کی میٹنگ، مرکزی وزیر تومر نے کیا افتتاح

G-20 Meeting

بھارت کی جی – ٹوئنٹی صدارت کے تحت مالی تانے بانے سے متعلق پہلے جی – ٹوئنٹی بین الاقوامی ورکنگ گروپ کی میٹنگ چنڈی گڑھ میں منعقد ہوئی 

چندی گڑھ، 30 جنوری(ایچ ڈی نیوز)۔
جی-ٹوئنٹی کی‘ بھارت کی صدارت کے تحت‘ مالی تانے بانے سےمتعلق بین الاقوامی ورکنگ گروپ کی پہلی میٹنگ چنڈی گڑھ میں منعقد ہوئی۔ مرکزی وزیرنریندر سنگھ تومر اور پشو پتی کمار پارس نے اس کا افتتاح کیا۔ اس موقع پر جناب تومرنے کہا کہ بھارت سائنس اور اختراع کی وجہ سے تیزی کے ساتھ ترقی کررہا ہے اور دونوں کا ہی قریبی تعلق بھارت کے مستقبل سے ہے۔  مالی تانے بانے سے متعلق بین الاقوامی ورکنگ گروپ‘ جی-ٹوئنٹی مالی طریقے پر کاربند‘ اہم ورکنگ گروپوں میں سے ایک ہے‘ جو بین الاقوامی مالی تانے بانے کو مستحکم بنانے پر خاص توجہ دیتا ہے۔ اس کا مقصد‘ جلد متاثر ہونے والے ملکوں کو درپیش بہت سے چیلنجوں کو دورکرنا بھی ہے۔
G-20 meeting
اجلاس کا پہلا دن دو سیشنز کے ساتھ ساتھ ایک ضمنی تقریب پر مشتمل تھا، جس میں بین الاقوامی مالیاتی ڈھانچے کے استحکام اور ہم آہنگی کو بڑھانے اور اسے 21ویں صدی کے عالمی چیلنجوں سے نمٹنے کے قابل بنانے کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ میٹنگ کے دوران بات چیت کو وزارت خزانہ اور ریزرو بینک آف انڈیا کے ساتھ ساتھ بین الاقوامی مالیاتی ڈھانچہ ورکنگ گروپ، فرانس اور جنوبی کوریا کے شریک چیئرمینوں نے مشترکہ طور پر ماڈریٹ کیا۔ انٹرنیشنل فنانشیل آ سٹرکچر ورکنگ گروپ کا مقصد کمزور ممالک کو درپیش مختلف چیلنجوں سے نمٹنا ہے۔ جی -20 کے ارکان، مدعو ممالک اور بین الاقوامی تنظیموں کے تقریباً 100 مندوبین دو روزہ طویل اجلاس میں شرکت کے لیے چندی گڑھ پہنچے ۔ اجلاس میں غریب اور کمزور ممالک کو زیادہ سے زیادہ امداد فراہم کرنے کے طریقے تلاش کرنے پر بھی زور دیا گیا۔
اس دوران ایک جی-20 ایونٹ کا بھی اہتمام کیا گیا جس کا عنوان تھا ‘سنٹرل بینک ڈیجیٹل کرنسیز (سی بی ڈی سی ایس) مواقع اور چیلنجز’۔ اس تقریب کا مقصد ملک کے تجربات کو بانٹنا اورسی بی ڈی سی ایس کے وسیع مضمرات کے بارے میں گہری سمجھ پیدا کرنا ہے۔ اس سے پہلے، شہر بھر میں کئی تقریبات کا اہتمام کیا گیا ہے، جس سے ہندوستان کی صدارت میں جی-20 ایونٹس میں وسیع پیمانے پر ‘لوگوں کی شرکت’ اور دلچسپی کا اشارہ ملتا ہے۔ غیر ملکی مندوبین نے پنجاب اور ہریانہ کے روایتی دستکاریوں کی نمائش دیکھ کر خوشی کا اظہار کیا۔ پنجاب کی مقامی کشیدہ کاری، پھول کاری ایک خاص توجہ کا مرکز رہی۔ چونکہ 2023 کو بین الاقوامی جوار کے اناج کے طور پر منایا جا رہا ہے، اس لیے تمام وفود کو غذائیت سے بھرپور باجرے کے ہیمپرز بھی پیش کیے گئے۔ اس موقع پر مرکزی وزیر تومر نے کہا کہ سائنس اور اختراع کی وجہ سے ہندوستان تیزی سے ترقی کر رہا ہے، یہ دونوں ہندوستان کے مستقبل سے گہرے وابستہ ہیں۔ ہم نے ڈیجیٹل پبلک انفراسٹرکچر بنانے کے لیے ٹیکنالوجی کا فائدہ اٹھایا ہے۔ عالمی صحت کی دیکھ بھال میں مالی شمولیت، ہم پائیدار توانائی کی طرف بڑھنے میں اہم کردار ادا کر رہے ہیں اور ترقی کی عوام پر مرکوز ہماری قومی حکمت عملی کی بنیاد ہے۔ یہ وہی فلسفہ ہے جو ہماری جی-20 صدارت کا موضوع ہے، ‘ایک زمین، ایک خاندان، ایک مستقبل’۔
G-20 meeting
مرکزی وزیر پارس نے کہا کہ ہندوستان کی کوشش ہوگی کہ تعمیری بات چیت کی سہولت فراہم کی جائے، علم کا اشتراک کیا جائے اور ایک محفوظ، پرامن اور خوشحال دنیا کی اجتماعی خواہش کے لیے مل کر کام کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ جی-20 کی ہندوستانی صدارت کی ذمہ داری ہے کہ وہ اب تک کی پیشرفت کو آگے بڑھائے اور اس بات کو یقینی بنائے کہ بین الاقوامی مالیاتی ڈھانچہ آج درپیش شدید چیلنجوں کا مقابلہ کرنے اور کمزور گروہوں کو زیادہ سے زیادہ مدد فراہم کرنے کے لیے اچھی طرح سے لیس رہے۔

Related posts

قدرت کا کرشمہ: قیامت خیز زلزلہ سے تباہ عمارت کے ملبہ میں پھنسی خاتون نے بچی کو دیا جنم

Hamari Duniya

اڈانی کے ساتھ مودی جی کی ساکھ داؤ پر

Hamari Duniya

مسلمانوں میں کردار سازی کی ضرورت ہے

Hamari Duniya