31.7 C
Delhi
May 24, 2024
Hamari Duniya
Breaking News دہلی

بی جے پی کے یوا مورچہ کے صدر نے اپنی ہی بیٹی کے اغوا کی رچی سازش، بی جے پی نے پارٹی سے نکالا

Delhi BJP Youth President

نئی دہلی،10فروری(ایچ ڈی نیوز)
دہلی بی جے پی (بھارتیہ جنتا پارٹی) نے یووا مورچہ کے صدر باسو روکھر کو پارٹی سے نکال دیا ہے۔ الزام ہے کہ باسو نے دو دن پہلے اپنی ڈیڑھ ماہ کی بیٹی کو اغوا کرنے کی جھوٹی کہانی بنائی تھی۔ تحقیقات کے دوران پتہ چلا ہے کہ اغوا کا یہ کیس فرضی ہے۔بی جے پی ذرائع کے مطابق یہ باسو کی تیسری بیٹی تھی۔ اس لیے وہ بیٹی سے جان چھڑانا چاہتا تھا۔ اس وجہ سے اس نے اپنی بیٹی کو ماتا جھنڈے والی کے مندر میں چھوڑ دیا۔ اس کے بعد پولیس میں شکایت درج کرائی گئی کہ اسے اغوا کر لیا گیا ہے۔
اہم بات یہ ہے کہ دہلی پردیش یووا مورچہ کے صدر کی بیٹی کے اغوا کی اطلاع ملتے ہی ہلچل مچ گئی تھی۔ ایکشن میں آتے ہی پولس نے علاقہ میں ناکہ بندی کی تھی۔ دعویٰ کیا جا رہا تھا کہ باسو روکھر کی بیوی اپنی ڈیڑھ ماہ کی بچی کو لے کر جا رہی تھی۔ اس دوران موٹر سائیکل سوار لڑکی کو راستے میں اس کی گود سے چھین کر فرار ہو گئے۔ اس کی اطلاع ملتے ہی ضلع وسطی کی ڈی سی پی شویتا چوہان پولیس افسران کے ساتھ موقع پر پہنچی اور تحقیقات شروع کی۔ پولیس نے آدھے گھنٹے میں لڑکی کو تلاش کر کے اس کے لواحقین کے حوالے کر دیا۔ اس کے بعد جب معاملے کی چھان بین ہوئی تو چونکا دینے والا سچ سامنے آیا۔

Related posts

مسلم خواتین کا جھکاؤ بی جے پی کی طرف ہے،اقلیتی مورچہ کے صدر جمال صدیقی کا دعویٰ

Hamari Duniya

غالب دنیا کے سب سے ماڈرن شاعروں میں سے ایک: پروفیسر اروند

Hamari Duniya

بی جے پی اپنے سیاسی فائدے کے لیے فرقہ وارانہ کارڈ کا استعمال کر رہی ہے

Hamari Duniya