36.1 C
Delhi
May 21, 2024
Hamari Duniya
Breaking News قومی خبریں

پرالی جلانے کو لے کر وزیراعلیٰ یوگی سخت، افسران کو دی سخت ہدایت

CM-Yogi-Aditya Nath

وزیر اعلیٰ نے ریاست میں پرالی جلانے کی وجہ سے بڑھتی آلودگی کے مسئلہ پر تشویش کا اظہار کیا

وزیراعلیٰ نے محکمہ کے افسران کو حساس دیہاتوں میں کیمپ لگا کر آگاہی پھیلانے کی ہدایات دیں

لکھنؤ،(ایچ ڈی نیوز)۔

اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے ریاست میں پرالی جلانے کی وجہ سے بڑھتی ہوئی آلودگی کے مسئلہ پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے محکمہ کے افسران کو سخت ہدایات دی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کاشتکاروں کو پرالی جلانے سے ہونے والے نقصانات کے بارے میں آگاہ کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ فصل کی باقیات کو کاٹ کر، کھیت میں پانی ڈال کر اور یوریا کا چھڑکاو کر کے کھیت میں موجود پرالی کو کھاد بنانے کے ہنر کو وسیع پیمانے پر تشہیر کی جانی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ حساس دیہات میں ضلعی سطح کے افسران کے لیے کیمپ لگا کر پرالی جلانے کے واقعات کی روک تھام کے لیے اقدامات کیے جائیں۔ مختلف محکموں کے ملازمین کو گاو¿ں کے حساب سے رابطہ قائم کرنے کے لیے ڈیوٹی پر لگایا جائے۔
پرالی کے سلسلے میں اٹھائے گئے قدم
اس دوران محکمہ زراعت کے ایڈیشنل چیف سکریٹری دیویش چترویدی نے بتایا کہ ہر ضلع میں پرالی کو گوشالاﺅں تک پہونچایا جارہا ہے ’پرالی دو، کھاد لو‘ پروگرام کو تمام اضلاع میں زیادہ سے زیادہ فروغ دیا جا رہا ہے، تاکہ اس بار پرالی جلانے کے واقعات کو کم کیا جا سکے۔ اس کے علاوہ اتر پردیش میں 16 وائیوبریکیٹ اور وائیوکول پلانٹ لگائے گئے ہیں۔ ان پلانٹس پر بھی پرالی پہنچائی جا رہی ہے۔ کمبائن ہارویسٹر سے کٹائی کے ساتھ ساتھ فصل کی باقیات کے انتظام کے لیے سپر ایس ایم ایس یا دیگر زرعی مشینری کو لازمی قرار دیا جائے۔
ان اضلاع میں پرالی کے واقعات صفر
ریاست میں کچھ ایسے اضلاع ہیں جہاں پر پرالی جلانے کے واقعات صفر ہیں۔ ان میں وارانسی، سون بھدر، سنت رویداس نگر، مہوبہ، کاس گنج، جالون، حمیر پور، گونڈہ، چندولی، باندہ، بدایوں ، اعظم گڑھ، امروہہ اور آگرہ شامل ہیں۔ واضح رہے کہ مشرقی اتر پردیش میں دھان کی کٹائی اور مغربی اتر پردیش میں گنے کی کٹائی شروع ہو گئی ہے۔ ان اضلاع پر خصوصی توجہ دینے کی ضرورت ہے۔ پوسا ڈی کمپوزر کو فوری طور پر کسانوں کے ذریعے ہر ضلع میں تقسیم کیا جائے، تاکہ فصل کی باقیات کو کھیت میں ہی گلنے اور ان کا انتظام کیا جا سکے۔
پرالی جلانا قابل سزا جرم
سپریم کورٹ اور این جی ٹی (نیشنل گرین ٹریبونل) نے پرالی جلانے کو قابل جرم سزا قرار دیا ہے۔ ایسا کرنے کے بجائے کسانوں کو چاہیے کہ وہ ان اسکیموں سے فائدہ اٹھائیں جن کے ذریعے پرالی کو کھاد میں بدلا جا جا سکتا ہے اور اسے کارآمد بنایا جا سکتا ہے۔ حکومت ایسی زرعی مشینری پر سبسڈی بھی دے رہی ہے۔ بہت سی جگہوں پر کسانوں نے ان زرعی مشینوں کے ذریعہ پرالی کو کمائی کا ذریعہ بنایا ، دوسرے کسان بھی ان سے سیکھ سکتے ہیں۔

Related posts

نتیش کمار نے دوست بدلتے ہی مودی پر حملے تیز کردیئے

Hamari Duniya

وزیراعلیٰ کی بڑھتی مقبولیت سے بی جے پی پریشان،اب ڈی ٹی سی بس میں بدعنوانی، تفتیش سی بی آئی کے حوالے

Hamari Duniya

آشرم فلائی اوور پر45 دنوں تک بھول کر نہ جائیں

Hamari Duniya