33.1 C
Delhi
July 15, 2024
Hamari Duniya
Breaking News دہلی

اسمبلی اجلاس کوچہرہ چمکانے کیلئے اور سیاسی ہتھیار کے طور پر استعمال نہ کریں

Adesh Gupta

نئی دہلی(ایچ ڈی نیوز)۔
بھارتیہ جنتا پارٹی کے ریاستی صدر شری آدیش گپتا نے کہا کہ دہلی کی اسمبلی کا اجلاس گزشتہ پانچ دنوں سے جاری ہے، لیکن ان پانچ دنوں میں صرف اپنا چہرہ چمکا کر اور ادھر ادھر کی باتیں کرکے دہلی کے لوگوں کی توجہ اپنی طرف مبذول کرائی جائے۔ اپنے خلاف لگائے گئے الزامات سے کنارہ کشی کا کام کیا ہے۔ انہوں نے کیجریوال کو چیلنج کرتے ہوئے کہا کہ کیجریوال بتائیں کہ ان پانچ دنوں کے دوران دہلی کے عوام کے کن مسائل پر اسمبلی میں بحث ہوئی۔ کیجریوال حکومت نے دہلی کی آلودگی، پانی، بجلی، خستہ حال ٹرانسپورٹ سسٹم، نئی ایکسائز پالیسی میں بدعنوانی اور اسکول کے کمروں کی تعمیر میں بدعنوانی جیسے سلگتے مسائل پر اسمبلی میں بحث کیوں نہیں کی۔
آدیش گپتا نے کہا کہ کجریوال پہلے وزیر اعلیٰ ہیں جو جمہوریت کا گلا گھونٹ کر یا تو اپوزیشن کو اسمبلی میں بولنے نہیں دیتے یا انہیں اسمبلی سے باہر پھینک دیتے ہیں تاکہ وہ اسمبلی اجلاس کو اپنے ذاتی سیاسی فائدے کے لیے استعمال کر سکیں۔ پورے پانچ دن تک عام آدمی پارٹی کے ایم ایل اے اپنی من مانی کرتے رہے اور اسمبلی کو ہتھیار کے طور پر استعمال کرتے رہے۔ انہوں نے کہا کہ ان کے ایم ایل اے اسمبلی میں کمل کا پھول جلاتے ہیں، آخر آپ ایم ایل اے کیجریوال کے کہنے پر ایسی حرکتیں کرکے دہلی کے عوام کو کیا پیغام دینا چاہتے ہیں۔
آدیش گپتا نے کہا کہ کیجریوال حکومت نے اپنے ہی ضابطوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے بدعنوانی کی اور جب اس پر سوال پوچھے گئے تو غصہ اتنا بڑھ گیا کہ لیفٹیننٹ بھی الزامات لگانے لگ گئے ۔ انہوں نے کہا کہ کیجریوال نے شروع سے ہی بی جے پی لیڈروں پر بے بنیاد الزامات لگائے لیکن عدالت میں ایک بھی ثابت نہیں کر سکے اور پھر انہیں تحریری معافی مانگنی پڑی۔ مسٹر گپتا نے دعویٰ کیا کہ آنے والے وقت میں کیجریوال لیفٹیننٹ گورنر پر لگائے گئے الزامات کے لیے بھی معافی مانگنے والے ہیں۔ آدیش گپتا نے کہا کہ آزادی کے بعد سرکاری تفتیشی ایجنسیاں چاہے وہ سی بی آئی ہو، ای ڈی ہو یا کوئی اور، سبھی اپنا کام آزادانہ طور پر کرتی ہیں۔ ان پر نہ حکومت مداخلت کرتی ہے اور نہ ہی کوئی حکومت سوال اٹھاتی ہے۔ لیکن کیجریوال کے ایم ایل اے سی بی آئی کے دفتر کے باہر دھرنا دے رہے ہیں جو ان کی ملک دشمن ذہنیت کو ظاہر کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کیجریوال ایسے وزیر اعلیٰ ہیں جو ملک کے بہادر سپاہیوں کی بہادری پر سوال اٹھاتے ہیں تو ان سے حب الوطنی کی امید نہیں کی جا سکتی۔ لیکن آج دہلی جاننا چاہتی ہے کہ وہ کب تک نئی ایکسائز پالیسی اور اسکولوں میں کمروں کی تعمیر کے نام پر کی گئی بدعنوانی کا حساب دیں گے ۔

Related posts

انڈین یونین مسلم لیگ کے ایم پی نے حکومت کو دیا انتباہ، کہا سی اے اے کے ذریعہ آگ سے مت کھیلیں

Hamari Duniya

سماج میں جہالت کی وجہ سے رائج بے شمار برائیوں اور بیماریوں کا مکمل علاج ہے تعلیم : نوراللہ خان

Hamari Duniya

قاسم سلیمانی کے قتل کو بھولا نہیں ہے ایران،خطرناک میزائل تیار کرنے کے بعد ٹرمپ اور ان کی انتظامیہ کو دھمکی

Hamari Duniya