22.8 C
Delhi
February 24, 2024
Hamari Duniya
Breaking News قومی خبریں

پھر اشوک گہلوت نے بڑی غلطی کردی،ششی تھرور نے کیاکارروائی کا مطالبہ

Ashok Gehlot

جے پور(ایچ ڈی نیوز)۔
کانگریس صدر کے انتخاب کے لیے ووٹنگ سے قبل وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت نے ملکارجن کھڑگے کے لیے ووٹ مانگ کر سیاسی حلقوں میں ایک نئی بحث شروع کر دی ہے۔سنٹرل الیکشن اتھارٹی آف کانگریس کی ہدایات کے باوجود وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت نے سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو پیغام شیئر کیا ہے جس میں کھڑگے کو جیتنے کی اپیل کی گئی ہے۔اسے کھڑگے کے حق میں کھل کر تشہیر مانا جارہا ہے، جبکہ کانگریس الیکشن اتھارٹی کے رہنما خطوط کے مطابق کوئی لیڈر عہدہ پر رہتے ہوئے کسی بھی امیدوار کے لیے مہم نہیں چلا سکتا۔
اس دوران بھوپال پہنچے صدرعہدہ کے امیدوار ششی تھرور نے گہلوت کے کھڑگے کے حق میں مہم چلانے پر اعتراض کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس الیکشن اتھارٹی کے سربراہ مدھوسودن مستری کو دیکھنا چاہئے کہ کہاں غلط ہو رہا ہے۔ اسے اس کے مطابق عمل کرنا چاہیے۔
اس سے قبل 30 ستمبر کو کانگریس الیکشن اتھارٹی کے صدر مدھوسودن مستری نے کانگریس صدر کے انتخاب کے سلسلے میں سات نکاتی رہنما خطوط جاری کیے تھے۔ اس کے مطابق کانگریس کے انچارج جنرل سکریٹری، سکریٹری انچارج ، قومی عہدیدار ، مقننہ پارٹی کے لیڈر ، پارٹی کے ترجمان صدر کے عہدے کے لیے کسی امیدوار کے لیے مہم نہیں چلا سکتے۔ اگر وہ کسی امیدوار کے لیے مہم چلانا چاہتے ہیں تو انہیں پہلے عہدہ چھوڑنا ہوگا۔ اس ہدایت کے باوجود وزیر اعلیٰ اشوک گہلوت نے کھل کر کھڑگے کے لیے مہم چلائی ہے۔
سی ایم نے ٹویٹ کیا اور لکھا کہ مجھے امید ہے کہ تمام مندوبین بھاری اکثریت سے ملکارجن کھڑگے کو کامیاب کریں گے۔ کامیاب ہونے کے بعد وہ ہم سب کی رہنمائی کریں گے اور کانگریس مضبوط اپوزیشن کے طور پر ابھرے گی۔ یہ میرا خیال ہے ، میری خواہش ہے کہ کھڑگے صاحب بھاری ووٹوں سے کامیاب ہوں۔
گہلوت نے ویڈیو جاری کرتے ہوئے کہا ،’کانگریس کا صدر ایسا ہونا چاہیے جو تنظیم ، لیڈروں اور تجربہ کار کارکنوں کے ساتھ رابطے میں رہے۔ ان کی پوزیشن ایسی ہونی چاہیے کہ وہ تمام اپوزیشن جماعتوں سے مذاکرات کر سکے۔ اب تمام پارٹیوں کو مرکزی حکومت اور بی جے پی کے ساتھ مل کر لڑنا ہے۔ اب تمام اپوزیشن پارٹیوں کو مل کر بی جے پی کے خلاف لڑنا ہوگا۔ صدر ایسا شخص ہونا چاہیے جو سب کو ساتھ لے کر چلنے کی صلاحیت رکھتا ہو۔ ان کی اس قابلیت کو دیکھ کر ہم ان کے حامی بن گئے۔
انہوں نے کہا کہ ملکارجن کھڑگے تجربہ کار شخصیت سے مالا مال ہیں۔ ان کے پاس 50 سال سے زیادہ کا تجربہ ہے جس میں نو بار ودھان سبھا اور دو بار ایم پی رہ چکے ہیں۔ ہم ان کے حامی بن گئے ہیں۔ کھڑگے ایک ایسے شخص ہیں جنہوں نے کانگریس کی پالیسیوں ، نظریے اور پروگراموں کو اپنے اندر سمیٹ لیا ہے۔ ہندی اور انگریزی میں کمانڈ حاصل ہے۔ جدوجہد کی زندگی گزاری ہے۔ کانگریس الیکشن اتھارٹی کی گائیڈ لائن کے تیسرے نکتے میں لکھا ہے کہ کانگریس کے ریاستی صدر ، سی ایل پی لیڈر (سی ایم) ، جنرل سکریٹری انچارج ، سکریٹری ، ترجمان صدر کے عہدے کے لیے کسی امیدوار کے لیے مہم نہیں چلا سکتے۔ اگر کوئی صدر کے عہدے کے لیے مہم چلانا چاہتا ہے تو اسے پہلے تنظیم کے عہدے سے استعفیٰ دینا ہوگا۔

Related posts

 مقابلے کے اس دور میں ترقی کے لیے اعلی تعلیم ضروری ہے: شبیر احمد انصاری

Hamari Duniya

ملک کے ہرشہری کومساوی حقوق حاصل ہیں: پروفیسر شیخ عقیل احمد

Hamari Duniya

ملکارجن کھڑگے نے پہلی ہی اسٹیئرنگ کمیٹی کی میٹنگ میں کانگریس لیڈروں کی کلاس لگادی، کہا کام نہیں کرسکتے تو دوسروں کو موقع دیں،15 دن کے اندر تحریک چلانے کا خاکہ مانگ لیا

Hamari Duniya